PDA

View Full Version : پروین شاکر کا مجموعہ کلام



بختی
11-01-2012, 09:48 AM
(November 24, 1952 - December 26, 1994) دسمبر کو پروین شاکر ( کی برسی منائی جاتی ہے۔ اکثر رومان پرست شعراءکی طرح پروین کا انتقال درمیانی عمر میں ہو گیا۔اُردو شاعری میں اُن کا کلام ایک خاص انفرادیت کا حامل ہے۔

بیسویں صدی کی چھٹی دہائی کے بعدنسائی شاعری ایک نئی شناخت کے ساتھ اُردو کے ادبی منظر نامے پر جلوہ افروز ہوئی۔ پروین شاکر ہمیں اس منظر نامے پر ماہِ تمام کی طرح چمکتی دکھائی دیتی ہیں۔ اپنی اولین کتاب کی اشاعت سے پہلے ہی پروین کی شاعری ادبی رسالوں کے ذریعے اپنے مداح پیدا کر چکی تھی ۔

خوشبو کی اشاعت کے ساتھ ہی پروین شاکر کا شمار صفِ اول کی شاعرات میں ہونے لگاتھا۔خوشبو کی مقبولیت کا یہ عالم تھا کہ پہلی اشاعت کے چھ ماہ بعد ہی اس کا دوسرا ایڈیشن چھاپنا پڑا۔ پروین سے پہلے کسی شاعرہ نے نسوانی جذبات کو اتنے خوبصورت اور بے باک انداز سے قلمبند نہیں کیا تھا۔۔۔۔


اُن کے مجموعہ کلام میں سے کُچھ یہاں پر پوسٹ کرتی ہوں

بختی
11-01-2012, 09:58 AM
یارب! مرے سکوت کو نغمہ سرائی دے
زخمِ ہُنر کو حوصلہ لب کشائی دے

لہجے کو جُوئے آب کی وہ نے نوائی دے
دُنیا کو حرف حرف کا بہنا سنائی دے

رگ رگ میں اُس کا لمس اُترتا دکھائی دے
جو کیفیت بھی جسم کو دے ، انتہائی دے

شہرِ سخن سے رُوح کو وہ آشنائی دے
آنکھیں بھی بند رکھوں تو رستہ سجھائی دے

تخیلِ ماہتاب ہو، اظہارِ آئینہ
آنکھوں کو لفظ لفظ کا چہرہ دکھائی دے

دل کو لہو کروں تو کوئی نقش بن سکے
تو مجھ کو کربِ ذات کی سچی کمائی دے

دُکھ کے سفر میں منزلِ نایافت کُچھ نہ ہو
زخمِ جگر سے زخمِ ہُنر تک رسائی دے

میں عشق کائنات میں زنجیر ہو سکوں
مجھ کو حصارِ ذات کے شر سے رہائی دے

پہروں کی تشنگی پہ بھی ثابت قدم رہوں
دشتِ بلا میں، رُوح مجھے کربلائی دے

بختی
11-01-2012, 09:59 AM
واہمہ

تمھارا کہنا ہے
تم مجھے بے پناہ شدت سے چاہتے ہو
تمھاری چاہت
وصال کی آخری حدوں تک
مرے فقط میرے نام ہوگی
مجھے یقین ہے مجھے یقین ہے
مگر قسم کھانے والے لڑکے
تمھاری آنکھوں میں ایک تل ہے!

بختی
11-01-2012, 10:02 AM
کشف
ہونٹ بے بات ہنسے
زلف بے وجہ کھلی
خواب دکھلا کہ مجھے
نیند کس سمت چلی
خوشبو لہرائی میرے کان میں سرگوشی کی
اپنی شرمیلی ہنسی میں نے سنی
اور پھر جان گئی
!!!میری آنکھوں میں تیرے نام کا تارا چمکا

بختی
11-01-2012, 10:03 AM
کانچ کی سرخ چوڑی
میرے ہاتھ میں
آج ایسے کھنکنے لگی
جیسے کل رات شبنم سے لکھی ہوئی
ترے ہاتھوں کی شوخیوں کو
ہواؤں نے سَر دے دیا ہو

بختی
11-01-2012, 10:06 AM
ایک شعر

ہمیں خبر ہے ، ہوا کا مزاج رکھتے ہو
مگر یہ کیا ، کہ ذرا دیر کو رُکے بھی نہیں

بختی
11-01-2012, 10:07 AM
پیش کش
اتنے اچھے موسم میں
روٹھنا نہیں اچھا
ہار جیت کی باتیں
کل پہ ہم اٹھا رکھیں
آج دوستی کر لیں
============

بختی
11-01-2012, 10:08 AM
پیار

ابرِ بہار نے
پھول کا چہرا
اپنے بنفشی ہاتھ میں لے کر
ایسے چوما
پھول کے سارے دکھ
خوشبو بن کر بہہ نکلے ہیں
============

بختی
11-01-2012, 10:09 AM
گمان
میں کچی نیند میں ہوں
اور اپنے نیم خوابیدہ تنفس میں اترتی
چاندنی کی چاپ سنتی ہوں
گماں ہے
آج بھی شاید
میرے ماتھے پہ تیرے لب
ستارے ثبت کرتے ہیں

بختی
11-01-2012, 10:11 AM
بس اتنا یاد ہے

دعا تو جانے کون سی تھی
ذہن میں نہیں
بس اتنا یاد ہے
کہ دو ہتھیلیاں ملی ہوئی تھیں
جن میں ایک مری تھی
اور اک تمھاری

بختی
11-01-2012, 10:12 AM
فاصلے

پہلے خط روز لکھا کرتے تھے
دوسرے تیسرے ، تم فون بھی کر لیتے تھے
اور اب یہ ، کہ تمھاری خبریں
صرف اخبار سے مل پاتی ہیں
============

بختی
11-01-2012, 10:16 AM
کتھا رس

میرے شانوں پہ سر رکھ کے
آج
کسی کی یاد میں وہ جی بھر کے رویا
============

بختی
11-01-2012, 10:25 AM
چاند
ایک سے مسافر ہیں
ایک سا مقدر ہے
میں زمین پر تنہا
اور وہ آسمانوں میں

Shakeel Ahmed
11-01-2012, 10:59 AM
Kya kehnay ap ke zauq ke

ap ka intikhab ap ke ala zauq ki numaendgi karta hai

jari rakhye

بختی
11-01-2012, 11:00 AM
hmmmm thanks ji,,,,

waisy kia khnay????:P

and (jaari hai)..:D Insha Allah

بختی
11-01-2012, 11:15 AM
نوید
سماعتوں کو نوید ہو ۔۔۔ کہ
ہوائیں خوشبو کے گیت لے کر
دریچہٴ گل سے آ رہی ہیں
============

بختی
11-01-2012, 11:16 AM
ایک شعر

خوشبو بتا رہی ہے کہ وہ راستے میں ہے
موجِ ہوا کے ہاتھ میں اس کا سراغ ہے
============

Shakeel Ahmed
11-01-2012, 11:20 AM
ایک شعر

خوشبو بتا رہی ہے کہ وہ راستے میں ہے
موجِ ہوا کے ہاتھ میں اس کا سراغ ہے
============




kya he bat hai

بختی
11-01-2012, 11:27 AM
Shukran...................

Rapunzel
11-01-2012, 03:32 PM
bht achi collection hai :)

بختی
11-01-2012, 03:59 PM
bht achi collection hai :)

shhukria ji..:)

HUM*
12-01-2012, 03:25 AM
aap ka buhut buhut shukriya janab k parween shakir ka itna acha kalam hamare sath share kya :rose

HUM*
12-01-2012, 03:27 AM
wese parween aapa 26 maiN guzar gaiN theeN :soch

بختی
12-01-2012, 09:15 AM
wese parween aapa 26 maiN guzar gaiN theeN :soch

Ohhhh ye key board b na...complete nai likha gyaaa...:P , ab daikho aap..:popcorn

بختی
12-01-2012, 09:16 AM
aap ka buhut buhut shukriya janab k parween shakir ka itna acha kalam hamare sath share kya :rose


bohat shukriaaaaa...:)

بختی
12-01-2012, 09:21 AM
وہ خوبصورت الفاظ سے اپنے جذبات کی تصویر کشی کرتی تھیں-اُن کے بقول محبت جب نفس پر قابو پا لیتی ہے تو وجدان میں بدل جاتی ہے اور خوبصورتی نزاکت کی انتہا پر خوشبو میں بدل جاتی ہے۔ پروین شاکر کی شاعری بھی خوشبو کی طرح کو بہ کو پھیل چکی ہے۔دلوں میں اُتر گئی ہے اور اپنی شبنمی نزاکت سے روح کو تھپکتی ہے

بختی
12-01-2012, 09:24 AM
حسن کو سمجھنے کو عمر چاہیے ، جاناں
دو گھڑی کی چاہت میں لڑکیاں نہیں کھلتیں

وہ رت بھی آئی کہ میں پھول کی سہیلی ہوئی
مہک میں چمپا، روپ میں چنبیلی ہوئی
مجھ پہ چھا جائے وہ برسات کی خوشبو کی طرح
انگ انگ اپنا اسی رُت میں مہکتا دیکھوں

ہتھیلیوں کی دعا پھول لے کے آئی ہو
کبھی تو رنگ مرے ہاتھ کا حِنائی ہو

بختی
12-01-2012, 09:44 AM
محبت کی خوشبو کو اپنے شعروں میں سمونے والی شاعرہ جب اُداس ہو تی ہے تو کچھ اس طرح



بڑھتی جاتی ہے کشش وعدہ گر ہستی کی
اور کوئی کھینچ رہا ہے عدم آباد سے بھی

ظلم کی طرح اذیت میں ہے جس طرح حیات
ایسا لگتا ہے کہ اب حشر ہے کچھ دیر کی بات

روز اک دوست کے مرنے کی خبر آتی ہے
روز اک قتل پہ جس طرح کہ مامور ہے رات
--------------
چارہ گر ہار گیا ہو جیسے
اب تو مرنا ہی دوا ہو جیسے
--------------


حلقہ رنگ سے باہر نکلوں

خود کو خوشبو میں سمو کر دیکھوں
اُس کو بینائی کے اندر دیکھوں
عمر بھر دیکھوں کہ پل بھر دیکھوں
کس کی نیندوں کے چُرا لائی رنگ
موجہ زُلف کو چُھوکر دیکھوں
زرد برگد کے اکیلے پن میں
اپنی تنہائی کے منظر دیکھوں
موت کا ذائقہ لکھنے کے لیے
چند لمحوں کو ذرا مَر دیکھوں
------------

بختی
12-01-2012, 09:50 AM
پروین شاکر کی غزلیات کا مو ضوع محبت ہے ۔ اُن کی نظموں کی طرح غزلیں بھی انفرادی رنگ میں ہیں۔الفاظ اور جذبات کو ایک انوکھے تعلق میں باندھ کرسادہ الفاظ میں انہوں نے نسائی انا، خواہش ، انکار کو شعر کا روپ دیا ہے۔ اُن کی شاعری میں روایت سے انکار اور بغاوت بھی نظر آتی ہے۔

اس سے ملنا ہی نہیں دل میں تہیہ کر لیں
وہ خود آئے تو بہت سرد رویہ کر لیں
میں اس کی دسترس میں ہوںمگر وہ
مجھے میری رضا سے مانگتا ہے
:reading
اپنی رسوائی ترے نام کا چرچا دیکھوں
اک ذرا شعر کہوں اور میں کیا کیا دیکھوں

بختی
12-01-2012, 09:56 AM
اسی بغاوت کی پاداش میں شاید اپنے شوہر سے اُن کی علیحدگی ہو گئی اور خاندان نے اُن سے ترکِ تعلق کر لیا۔ پروین زخموں کو پھول بنانا جانتی تھیں۔



میری چادر تو چھنی تھی شام کی تنھائی میں
بے ردائی کو ھماری دے گیا تشہیر کون
-------------
کمالِ ضبط کو میں خود بھی تو آزماؤں گی
میں اپنے ہاتھ سے اس کی دلہن سجاؤں گی

سپرد کر کے اسے چاندنی کے ہاتھوں میں
میں اپنے گھر کے اندھیروں کو لوٹ آؤں گی
-----------
عکس خوشبو ہوں، بکھرنے سے نہ روکے کوئی
اور بکھر جاؤں تو مجھ کو نہ سمیٹے کوئی

Nomi_Khan
12-01-2012, 10:42 AM
wah kya kehnay, boht he acha intikhab ji

بختی
12-01-2012, 10:49 AM
:popcorn:)

Nomi_Khan
12-01-2012, 10:54 AM
:popcorn:)

mujhay bi chayen :popcorn
:eat

بختی
12-01-2012, 11:52 AM
mujhay bi chayen :popcorn
:eat
ISI LIE TO CHUP KAR KHAA RAHI THI....:p

HUM*
12-01-2012, 10:32 PM
wahhh wahhhh zabardast intekhaab :clap

HUM*
12-01-2012, 10:33 PM
ISI LIE TO CHUP KAR KHAA RAHI THI....:p


haeyyyy Laaa tum to behen ho maiN samjh rahi thi bhai ho :uff

HUM*
12-01-2012, 10:36 PM
Ohhhh ye key board b na...complete nai likha gyaaa...:P , ab daikho aap..:popcorn

aaho theek he :reading

بختی
13-01-2012, 12:01 PM
haeyyyy Laaa tum to behen ho maiN samjh rahi thi bhai ho :uff

ohhhhhhhhhhhhh tusi ethay v??? :).:P behan nai hona chahey kia????:bolo

بختی
13-01-2012, 12:02 PM
aaho theek he :reading

shukriaaaaaaaaaaaaa:queen

بختی
13-01-2012, 12:04 PM
wahhh wahhhh zabardast intekhaab :clap

bohaaaaaaaaaaaaaaat shukriaaaa :)

بختی
13-01-2012, 12:13 PM
ٹوٹی ہے میری نیند مگر تم کو اس سے کیا !
بجتے رہیں ہواؤں سے در ، تم کو اس سے کیا


تم موج موج مثلٍ صبا گُھومتے رہو
کٹ جائیں میری سوچ کے پرتُم کو اس سے کیا

اوروں کا ہاتھ تھامو انھیں راستہ دکھاؤ
میں بُھول جاؤں اپنا ہی گھر تم کو اس سے کیا

ابرِ گریز پا کو برسنے سے کیا غرض
سیپی میں بن نہ پائے گُہرتم کو اس سے کیا

لے جائیں مجھ کو مالِ غنیمت کے ساتھ عدو
تم نے توڈال دی ہے سپر تم کو اس سے کیا

تم نے تو تھک کے دشت میں خیمے لگالیے
تنہا کٹے کسی کا سفر تم کو اس سے کیا،،

نسوانی جذبوں کی اتھاہ گہرائیوں میں جانے والی شاعرہ تھیں اللہ تعالیٰ مغفرت فرمائے۔ آمین

بختی
13-01-2012, 12:15 PM
دل پہ اک طرفہ قیامت کرنا

دل پہ اک طرفہ قیامت کرنا
مسکراتے ہوئے رخصت کرنا

اچھی آنکھیں جو ملی ہیں اسکو
کچھ تو لازم ہوا وحشت کرنا

جرم کس کا تھا،سزا کس کو ملی
کیا گئی بات پہ حجت کرنا

کون چاہے گا تمہیں میری طرح
اب کسی سے نہ محبت کرنا

گھر کا دروازہ کھلا رکھا ہے
وقت مل جائے تو زخمت کرنا
(پروین شاکر)

بختی
13-01-2012, 12:22 PM
ہتھیلیوں کی دعا پھول لے کے آئی ہو
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔

ہتھیلیوں کی دعا پھول لے کے آئی ہو
کبھی تو رنگ مری ہاتھ کا حنائی ہو

کوئی تو ہو جو مرے تن کو روشنی بیھجے
کسی کا پیار ہوا میرے نام لائی ہو

گلابی پائوں مرے چمپئی بنانے کو
کسی نے صحن میں مہندی کا باڑھ اگائی ہیو

کبھی تو ہو مرے کمرے میں ایسا منظر
بہار دیکھ کے کھڑکی مسکرائی ہو

وہ سوتے جاگتے رہنے کا موسموں کا فسوں
یہ نیند میں ہوں مگر نیند بھی نہ آئی ہو

بختی
13-01-2012, 12:23 PM
ہجر کی شب کا کسی اسم سے کٹنا مشکل
چاند پورا ہے تو پھر درد کا گھٹنا مشکل

موجہ خواب ہے وہ ،اس کے ٹھکانے معلوم
اب گیا ہے تو یہ سمجھو کہ پلٹنا مشکل

جن درختوں کی جڑیں دل میں اتر جاتی ہیں
ان کا آندھی کی درانتی سے بھی کٹنا مشکل

قوت غم ہے جو اس طرح سنبھالے ہے مجھے
ورنہ بکھروں کسی لمحے تو سمٹنا مشکل

اس سے ملتے ہوئے چہرے بھی بہت ہونے لگے
شہر کے شہر سے اک ساتھ نمٹنا مشکل

اب کے بھی خوشوں پہ کچھ نام تھے پہلے سے لکھے
اب کے بھی فصل کا دہقانوں میں بٹنا مشکل

بختی
13-01-2012, 12:24 PM
اسی طرح سے ہر ایک زخم خوشنما دیکھے
وہ آئے تو مجھے اب بھی ہرا بھرا دیکھے

گزر گئے ہیں بہت دن رفاقت شب میں
اک عمر ہو گئی چہری وہ چاند سا دیکھے

مرے سکوت سے جس کا گلے رہے کیا کیا
بچھڑتے وقت ان آنکھوں کا بولنا دیکھے

ترے سوا بھی کئی رنگ خوش نظر تھے مگر
جو تجھ کو دیکھ چکا ہو وہ اور کیا دیکھے

بس ایک ریت کا ذرہ بچا تھا آنکھوں میں
ابھی تلک جو مسافر کا راستہ دیکھے

اسی سےپوچھے کوئی دشت کی رفاقت جو
جب آنکھ کھولے پہاڑوں کا سلسلہ دیکھے

تجھے عزیز تھا اور میں نے اسکو جیت لیا
مری طرف بھی تو اک پل ترا خدا دیکھے

بختی
13-01-2012, 12:25 PM
کنگن بیلے کا

اس نے میرے ہاتھ میں باندھا
اجلا کنگن بیلے کا
پہلے پیار سے تھامی کلائی
بعد اسکے ہولے ہولے پہنایا
گہنا پھولوں کا
پھر جھک کر ہاتھ کو چوم لیا
پھول تو آخر پھول ہی تھے
مرجھا ہی گئے
لیکن میری راتیں انکی خوشبو سے اب تک روشن ہیں
بانہوں پر وہ لمس ابھی تک تازہ ہے
شاخ صنوبر پر اک چاند دمکتا ہے
پھول کا گہنا
پریم کا کنگن
پیار کا بندھن
اب تک میری یاد کے ہاتھ لپٹا ہوا ہے

بختی
13-01-2012, 12:26 PM
کیا کیا دکھ دل نے پائے
نھنی سی خوشی کے بدلے

ہاں کون سے زخم نہ کھائے
تھوڑی سی ہنسی کے بدلے

زخموں کا کون شمار کرے
یادوں کا کیسے حصار کرے
اور جینا پھر سے عذاب کرے
اس وقت کا کون حساب کرے

وہ وقت جو تجھ بن بیت گیا

بختی
13-01-2012, 12:26 PM
کھلی آنکھوں میں سپنا جھانکتا ہے
وہ سویا ہے کہ کچھ کچھ جاگتا ہے

تری چاہت کے بھیگے جنگلوں میں
مرا تن،مور بن کر ناچتا ہے

مجھے ہر کیفیت میں کیوں نہ سمجھے
وہ میرے سب حوالے جانتا ہے

میں اس کی دسترس میں ہوں،مگر وہ
مجھے میری رضا سے مانگتا ہے

کسی کے دھیان میں ڈوبا ہوا دل
بہانے سے مجھے بھی ٹالتا ہے

سڑک کو چھوڑ کر چلنا پڑے گا
کہ میرے گھر کا کچا راستہ ہے

بختی
13-01-2012, 12:29 PM
رستہ بھی کٹھن دھوہ میں شدت بھی بہت تھی
سائے سے مگر اس کو محبے بھی بہت ہے

خیمے نہ کوئی میرے مسافر کے جلائے
زخمی تھا بہت پائوں مسافت بھی بہت تھی

سب دوست مرے منتظر پردہ شب تھے
دن میں تو سفر کرنے میں دقت بھی بہت تھی

بارش ملی دعائوں میں نمی آنکھ کی مل جائے
جذبے کی کبھی اتنی رفاقت بھی بہت تھی

کچھ تو ترے موسم ہی مجھے راس کم آئے
اور کچھ مری مٹی میں بغاوت بھی بہت تھی

پھولوں کا بکھرنا تو مقدر ہی تھا لیکن
کچھ اس میں ہوائوں کی سیاست بھی بہت تھی

وہ بھی سر مقتل ہے کہ سچ جس کا تھا شاید
اور واقف احوال عدالت بھی بہت تھی

اس ترک رفاقت پہ پریشان تو ہوں لیکن
اب تک کے ترے ساتھ پہ حیرت بھی بہت تھی

خوش آئے تھے شہر منافق کی امیری
ہم لوگوں کو سچ کہنے کی عادت بھی بہت تھی

بختی
13-01-2012, 12:35 PM
تجھ سے تو کوئی گلہ نہیں ہے
قسمت میں مری صلہ نہیں ہے

بچھڑے تو نجانے حال کیا ہو
جو شخص ابھی ملا نہیں ہے

جینے کی تو آرزو ہی کب تھی
مرنے کا بھی حوصلہ نہین ہے

جو زیست کو معتبر بنا دے
ایسا کوئی سلسلہ نہیں ہے

خوشبو کا حساب ہو چکا ہے
اور پھول ابھی کھلا نہیں ہے

سرشاری رہبری میں دیکھا
پیچھے مرا قافلہ نہیں ہے

اک ٹھیس پہ دل کا پھوٹ بہنا
چھونے میں تو آبلہ نہیں ہے

بختی
13-01-2012, 12:40 PM
اس بار جو ایندھن کے لئیے کٹ کے گرا ہے
چڑیوں کو بڑا پیار تھا اس بوڑھے شجر سے

Rapunzel
14-01-2012, 02:14 AM
bht achi sharing ki hai bakhti:rose

Nomi_Khan
14-01-2012, 04:28 PM
zabardast sharing

HUM*
15-01-2012, 12:31 AM
good work bakhti :clap :rose

بختی
15-01-2012, 05:52 PM
bht achi sharing ki hai bakhti:rose


shukriaaaaaaa:)

بختی
15-01-2012, 05:53 PM
good work bakhti :clap :rose


:) shukiraaa ji

بختی
15-01-2012, 05:53 PM
zabardast sharing
hmmmmmmmmmmmmm:angry1

__KK__
24-11-2012, 02:01 PM
Bohat Umda Sharing
Thanks for SharinG
Keep Sharing

Decent Boy
06-03-2013, 01:04 AM
buhut umdah Jee :)

Decent Boy
06-03-2013, 01:42 AM
buhut umdah Jee :)

Decent Boy
07-03-2013, 04:52 PM
Wah jee bohut Khoob :)

Rimsha
28-05-2013, 03:57 AM
Nyc...........

Anamika
06-06-2013, 09:08 AM
ts very nice shairing

thanks for shairing :rosy

Faisals619
14-07-2013, 02:35 PM
very very nice sharing..

Black Pearl
04-11-2013, 03:10 PM
Bohat khoob

Nice one

Jassi
09-11-2013, 08:35 AM
wahhh zabardast...........

UmerAmer
12-07-2014, 10:49 PM
very nice
keep it up